Flag

An official website of the United States government

امریکہ پاکستانی بچوں کے لیے ایک کروڑ ساٹھ لاکھ کووڈ ویکسین فراہم کرے گا
کی طرف سے
1 منٹ پڑھیں
اکتوبر 26, 2023

 اسلام آباد, ۲۷ جولائی ۲۰۲۲ء- ریاستہائے متحدہ امریکہ کوویکس کے ساتھ ایک معاہدہ کے تحت پاکستان کو بچوں کے لیے تیارکی گئی کووڈ-۱۹ٹیکوں کی ایک کروڑ ساٹھ لاکھ خوراکیں عطیہ کرے گا، جس کے بعد پاکستان کوامریکہ کی جانب سے دی جانے والی کورونا ویکسین کی تعداد سات کروڑ سترلاکھ سے زیادہ ہوجائے گی۔ ٹیکوں کی نئی کھیپ کی فراہمی کا اعلان واشنگٹن میں پاکستان اورامریکہ کے درمیان منعقد ہونے والے پہلے ہیلتھ ڈائیلاگ کے اختتام کے موقع پرکیا گیا۔ مزید برآں یوایس ایڈ کی جانب سے مالی اعانت کی مد میں دو کروڑ ڈالر اضافی معانت بھی پاکستان کو ویکسی نیشن مہم کی کوششوں میں مدد کے طور پر مہیا کرنے کا منصوبہ ہے۔ واضح رہے کہ وبا کے آغاز سے لیکراب تک امریکی حکومت کی جانب سے پاکستان کو سات کروڑچارلاکھ ڈالر کی براہ راست اور۱ کروڑ ۳۸ لاکھ ڈالر مالیت کا سامان کووڈ-۱۹ کے خلاف جنگ میں معاونت کے طور پر دیا گیا ہے۔

امریکہ پاکستان کوسب سے زیادہ کورونا ویکسین عطیہ کرنے والا واحد مُلک ہے۔ فائزراورموڈرنا ویکسین کےعلاوہ امریکہ نے یوایس ایڈ کے توسط سے چھیالیس لاکھ ڈالرمالیت کی چارموبائل لیبارٹریز پاکستان کے قومی ادارہ برائے صحت  کو فراہم کی ہیں۔ یہ لیبارٹریزکورونا وبا اور دیگر متعدی امراض کی تشخیص کی استعداد کار بڑھانے میں پاکستان کی معاون ثابت ہوں گی خاص طور پر دُورافتادہ اورسہولیات سے محروم علاقوں کے لوگ اس سہولت سے مستفید ہوں گے۔

یاد رہے کہ امریکہ نے پاکستان کوبارہ لاکھ این نائنٹی فائیو ماسک، چھانوے ہزارسرجیکل ماسک، باون ہزارحفاظتی گوگلز، دس لاکھ کووڈ فوری ٹیسٹ کے لیے درکار آلات، بارہ سوسے زائد پلس آکسی میٹرزاورچونسٹھ پاکستانی ہسپتالوں کے لیے دو سو وینٹی لیٹرز بھی فراہم کیے ہیں۔ امریکی حکومت نے پاکستان بھرمیں تیس ہزارسے زیادہ خواتین صحت کارکنوں کو کورونا متاثرین کی گھر ہی میں دیکھ بھال کی تربیت فراہم کی ہے اور مرض کی نگرانی اور رد عمل کے یونٹ اور ٹیموں کا نیٹ ورک بھی تشکیل دیا ہے، جس کے نتیجہ میں موجودہ وبا کی لہراور مستقبل میں آنے والی ممکنہ بیماریوں سے مقابلہ کے لیے بنیادی ڈھانچہ فراہم ہوا ہے۔

اس موقع پراظہارِ خیال کرتے ہوئے امریکی سفیر ڈونلڈ بلوم نے صحت کے شعبہ میں مضبوط باہمی تعاون کی اہمیت پرزوردیا اور کووڈ-۱۹ کے خلاف جنگ میں پاکستان کی شراکت کا ذکر اور تعاون پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ پچہترسال پرمُحیط باہمی تعلقات کے دوران ہم نے اپنے تعاون اور شراکت کے فروغ پرکام کیا ہے جو کہ کورونا وبا کے سدباب اور پاکستان میں اُس کے پھیلاؤ کے خاتمہ کے لیے کوششوں سے بھی عیاں ہے۔ ہم صحتِ عامہ کو لاحق اس دیرینہ مشکل پرقابوپانے کے لیے شانہ بشانہ کام کریں گے۔

امریکہ اورپاکستان کےحُکام، طبی ماہرین، نرسوں اور ترسیلات کے شعبہ سے وابستہ پیشہ ورافراد کے درمیان قریبی اشتراک کے نتائج عملی طور پراورانسانی زندگیوں کے تحفظ کی صورت میں نکل رہے ہیں۔ یاد رہے کہ ویکسین  کی ہراضافی خوراک مسقتبل میں ممکنہ طور پر آنے والی کووڈ-۱۹ کی لہروں کے مقابلہ کے لیے ہماری استعداد میں اضافہ کرتی ہے۔ امریکہ کورونا اوردیگرمتعدی امراض کے سدباب کی استعداد کارمیں اضافہ کے لیے پاکستان کے تمام محکموں کے ساتھ کام کرے گا۔ کورونا ویکسین کےعطیات سے متعلق مزید معلومات کے لیے براہ