Flag

An official website of the United States government

امریکہ کا پاکستان کو کورونا کی فوری تشخیص کیلئے10 لاکھ کِٹس کا عطیہ
کی طرف سے
1 منٹ پڑھیں
اگست 9, 2021

اسلام آباد (۹ اگست، ۲۰۲۱ء)۔۔ امریکی حکومت نےامریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) کے ذریعے کرونا وائرس کی تشخیص اور حفظانِ صحت کی ہنگامی ضروریات سے نمٹنے کے لیے دس لاکھ اینٹیجن فوری تشخیصی کِٹس آج پاکستان کے حوالے کیں۔ اِن ٹیسٹ کٹس کے ذریعے پاکستان کورونا وائرس کی مؤثراور فوری تشخیص کی ضرویات کو پورا کرسکے گا۔

یہ جدید فوری تشخیصی ٹیسٹ جسم کے اندر موجود انفیکشن کا منٹوں کے اندر پتہ لگاتا ہے۔ اس کے علاوہ اس سےبیماری کے پھیلائو کی بروقت نگرانی ممکن ہوتی ہے اورصحت حُکام کے لیے وباء سے سخت ترین متاثرہ علاقوں کی نشاندہی بھی ممکن ہو پائے گی۔   فوری اور درست تشخیص تک رسائی سے حکومت پاکستان کے نیشنل کمانڈ آپریشن سینٹر اور وفاقی وزارت صحت کوکورونا کے پھیلاؤ کومؤثرطریقے سے روکنے میں مدد ملے گی۔ یہ تشخیصی ٹیسٹ کٹس بالخصوص دورافتادہ علاقوں اورآمد و رفت والی سرحدی چوکیوں پر کورونا وائرس کےپھیلاؤ کوروکنے میں مددگارثابت ہونگی۔

اس موقع پر یو ایس ایڈ کی مشن ڈائریکٹر جولی کوئنین نے کہا کہ یہ فوری ٹیسٹ کرنے کی کٹس پاکستان کو کورونا وائرس کی فوری اور مؤثر طریقے سے تشخیص کرنے اور وائرس کو روکنے کیلئے حکمت عملی وضع کرنے میں مدد دیں گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ عطیہ امریکی صدر جو بائیڈن کے اس وعدے کی عکاسی کرتا ہے کہ امریکہ کورونا کے خلاف جنگ میں پاکستانی عوام کےشانہ بشانہ کھڑا ہے۔

کورونا تشخیصی ٹیسٹ کٹس کی یہ کھیپ وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر فیصل سلطان اور وزارت صحت کے دیگر اہلکاروں نے ایک باضابطہ تقریب میں وصول کیں۔ ڈاکٹر فیصل سلطان نے اس موقع پر یو ایس ایڈ کا اِس شاندار عطیے کی فراہمی اور دیرینہ شراکت  پر شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کی طرف سے یہ کاوش دونوں ملکوں کے درمیان دیرپا دوستی کی اعلیٰ مثال ہے۔

یاد رہے کہ امریکہ نے حکومت پاکستان کے ساتھ باہمی شراکت کے تحت کورونا کے دوران پانچ کروڑ ڈالر کی امداد فراہم کی ہے جس میں کورونا میں مبتلا مریضوں کیلئےدو سو وینٹی لیٹرز، طبی عملے کیلئے حفاظتی لباس (پی پی ایز) اور آکسی میٹرز بھی شامل ہیں۔ کورونا وبا کی ابتدا سے ہی امریکہ نے پاکستانی حکومت کے ساتھ مل کروائرس اور انفیکشن کی روک تھام، مریضوں کی بہتر دیکھ بھال، لیبارٹری ٹیسٹس کو وسعت دینے، بیماری کو مانیٹر کرنے اور تمام اضلاع میں کورونا کیسز کا سراغ لگانے کیلئے کام کیا۔ امریکی حکومت نےپچھلے ماہ بی اپنی داخلی ترسیلات سے پاکستانی عوام کیلئے پچپن لاکھ موڈرنا ویکسینز فراہم کیں تھیں۔

اس کے علاوہ امریکہ نے کورونا وبا کی روک تھام کیلئے کوویکس پروگرام کے تحت چار ارب ڈالر عطیہ کیے جس سے وہ اس مہلک وبا کے خلاف جنگ کرنے والے سب سے بڑے شراکت دار کے طور پر ابھرا۔ پاکستان نے کوویکس کے تحت رواں سال مئی سے لیکر اب تک امریکہ کی طرف سے اسٹرا زینیکا ویکسین کی کے چوبیس لاکھ ٹیکے بھی وصول کیے ہیں۔

کووڈ ۔۱۹ کے خلاف امریکی ردعمل جاننے کے لیے مندرجہ ذیل لنکس ملاحظہ فرمائیں۔

https://www.state.gov/covid-19-recovery/

https://www.usaid.gov/coronavirus-covid-19